جمہوری آزربائجان حکومت نے امام زمانہ علیہ السلام کے یوم ولادت کے موقع پر جشن منانے پر پابندی

شیعہ اور محبین اہل بیت علیھم اسلام  اکثریت والے ملک آذربائجان میں حکومت نے جشن ولادت امام زمان علیہ السلام پر پابندی لگا دی۔

خبر رساں ادارہ تسنیم کے مطابق رواں سال کو اتحاد اسلامی سال کا نام اور اسلامی اتحاد گیمز کا انعقاد کرنے والی آذربائجان کی حکمران جماعت کے ذریعہ جشن ولادت امام زماں علیہ السلام  پر لگائی گئی پابندی نے متضاد صورتحال کو جنم دے دیا ہے۔

“وطن اوغروند” آنلائن کے سربراہ نیز مقومت اسلامی در راہ قرہباغ کے صدرروشن احمد لی کا کہنا ہے کہ اپنے آپ کو اسلام کا حامی کہنے والی قوم کو ان کی مذہبی اور دینی عید منانے کی اجازت نہیں دیتے۔

روشن احمد لی کہتے ہیں کہ مختلف تمسن اور تہذیب اور اسلامی اتحاد کیلئے مسابقات کا ناعقاد کر رہی حکومت کا یہ قدم تعجب میں ڈالنے والا ہے انہوں نے کہا کہ تمام پابندیوں کے باوجود لوگ اس عید کو منائیں گے کیونکہ یہ قوم کے عقیدہ کا معاملہ ہے لوگ اس عید کو جوش و خروش سے مناتے رہے ہیں ۔

قرہ باغ تنظیم آزادی کے رہنما عاکف نقی نے حکومت کے اس عمل کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ یہ قدم اس بات کی نشاندہی کرتا ہے کہ قول اور عمل ایک دوسرے کے مخالف ہیں اسلامی اتحاد کے سال اور باکو میں اتحاد اسلامی مسابقات کے انعقاد کے وقت ایک مذہبی تقریب پر روک لگانا مناسب نہیں ہے۔

اگر اتحاد کی بات کرنا ہے تو پہلے اسلامی دنیا میں اتحاد پیدا کرنا ہوگا جو پروگرام منعقد کئے جاتے ہیں ان میں بھِی اس ضرورت کو پورا کرنے کی کوشش کی جائے۔

اسلامی نظام کے حامی قیدیوں کو آزاد کیا جائے دینا کو دکھانے سے پہتر ہے کہ ہم ملک کے داخلی مسائل کو حل کریں۔

تحریک روشن فکر  آذربائجان کے صدر الدنیز قلی اف نے کہا کہ صاف بات ہے جو بھی قوم کے معنوی اقدار میں تحریف کرتا ہے وہ معنویت کی پاسدار ایسی تقریبوں کی مخالفت کرتا ہے۔

اس ملک میں ایک طرف وہ لوگ ہیں جو لوگوں سے معنویت اوور روحانیت کو ختم کرنا چاہتے ہیں دوسری طرف قومی طاقتیں ہیں جو اس سرمایہ کو محفوظ رکھنا چاہتی ہیں ۔

یہ بات شرمناک ہے کہ آذربائجان میں اخلاق سوز پروگرام کے انعقاد کے لئے تمام سہولتیں موجود ہیں اس کا سد باب ہونا چاہئے۔

اسلامی اتحاد کے سال میں یہ واقعہ رونما ہونا حکومت کے قول و فعل میں پائے جانے والے تضاد کا واضح ثبوت ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *